سندھ حکومت کی تقریبا 60 ہزارایکڑ اراضی پرشخصیات و اداروں کے قبضے

سندھ حکومت کی تقریبا 60 ہزارایکڑ اراضی پرشخصیات و اداروں کے قبضے

کراچی (کنول زہرا) سرکاری زمینوں پر قبضے سے متعلق رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع، رپورٹ حکومت سندھ کے محکمہ ریونیو نے جمع کرائی۔ سندھ حکومت کی تقریبا 59803 ایکڑ اراضی پر تاحال مختلف شخصیات اور محکموں کا قبضہ ہے۔ رپورٹ میں اہم انکشاف سامنے آگیا۔

سندھ حکومت کی جانب سے سپریم کورٹ کو دی جانیوالی رپورٹ کے مطابق 52 ہزار ایکڑ سے زائد زمین پر سرکاری اداروں کا قبضہ برقرار ہے، آٹھ ہزار ایکڑ پر نجی اداروں اور شخصیات قابض ہیں۔ سب سے زیادہ ضلع غربی کی 37 ہزار ایکڑ زمین زیر قبضہ ہے۔ قابضین میں عسکری، وفاقی، صوبائی اور بلدیاتی ادارے شامل ہیں۔

محکمہ ریونیو حکومت سندھ کے مطابق گزشتہ چند ماہ میں محض 2864 ایکڑ زمین واگزار کرائی جاسکی۔ سندھ حکومت کی زمینوں پر قبضے کا انکشاف 2013 میں سپریم کورٹ میں دائر کی جانے والی درخواست میں ہوا تھا۔ زمینوں پر قبضہ ختم کرنے سے متعلق بیشتر اداروں نے کوئی جواب دینا بھی گوارہ نہ کیا۔ سندھ حکومت کھربوں روپے مالیت کی سرکاری زمین واگذار کراسکی اور نہ ہی قیمت وصول کر سکی۔