ایل ڈی اے میں لوٹ مار، من پسند افسروں کی تقرریاں

ایل ڈی اے میں لوٹ مار، من پسند افسروں کی تقرریاں

لاہور(نمائندہ تہلکہ ٹی وی) ایل ڈی اے میں لوٹ مار کیلئے من پسند افسروں کی تقرریاں جاری ۔ وحید احمد بٹ چیف میٹروپولیٹن پلینر کو ڈیپوٹیشن پر تین سال کیلئے غیر قانونی طور پر تعینات کیا گیا۔
جس کی میعاد 26 ستمبر 2016کو ختم ہو چکی ہے اور اس وقت وہ غیر قانونی طور پر پنجاب حکومت کے منظور نظر افراد کو فائدہ دینے کیلئے بطورچیف میٹروپولیٹن پلینرایل ڈی اے غیر قانونی طور پر فرائض انجام دے رہے ہیں ان کے تقرری کے آڈر3 جنوری2014 کیمطابق ان کی تعیناتی 11ستمبر 2013کو ہوئی اور کہا گیا کہ 3سال مکمل ہونے کے بعد وہ اپنے متعلقہ محکمہ میں واپس چلے جائے گے اور اگر نا گئے تو غیر حاضری تصور کی جائے گی ۔
چیف منسٹر پنجاب نے اپنے سیکرٹری کے ذریعے 13مئی 2016کو جو امداد اللہ بوسال سیکرٹری چیف منسٹر کے جاری ہوا واضح طور پر کہا گیا تھا کہ کوئی بھی افسر اپنی مدت معیاد ختم ہونے کے بعد اپنی متعلقہ جگہ پر نہیں رہے گا۔
7ستمبر کو گورنر پنجاب ، وزیر اعلی پنجاب ،چیف سیکرٹری ،سیکرٹری فنانس ،سیکرٹری لوکل گورنمنٹ کو محمد اظہر صدیق کو ذریعے خط لکھا گیا کہ وحید احمدبٹ غیر قانونی طور پر چیف میٹروپولیٹن کے طور پر کام کر رہے ہیں اس کے علاوہ ان کی مدت ملازمت 26ستمبر
کو ختم ہو گئی ہے اس میں توسیع نہیں کی جاسکتی ۔
26ستمبر 2016کو محمد اظہر صدیق نے دوبارہ قانونی نوٹس جاری کیا کہ وحید احمد بٹ چیف میٹروپولیٹن پلینر ایل ڈی اے لاہور مدت
ملازمت ختم ہونے کے بعد بھی کام کر ہے ہیں لہذا انہیں کام کرنے سے روکا جائے۔ان کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن تہلکہ ٹی وی کے پاس موجود ہے اورآج بھی وحید احمد بٹ بطور چیف میٹرو پولیٹن پلینرایل ڈی اے کام کررہے ہیں اور سرکاری کام سرانجام دے رہے ہیں جوکہ غیر آئینی اور غیر قانونی ہے۔

1

2

3

4

5