پاکستان ،بھارت مسئلہ کشمیر کا حل نکالیں،امریکا

پاکستان ،بھارت مسئلہ کشمیر کا حل نکالیں،امریکا

واشنگٹن:امریکا نے کہا ہے کہ کشمیرسےمتعلق مؤقف تبدیل نہیں ہوا،وہ چاہتا ہےکہ پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیرکاحل نکالیں۔

واشنگٹن میں میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے امریکی محکمہ خارجہ کےترجمان جان کربی نے کہا کہ کشیدگی کےخاتمےکیلئےپاکستان اور بھارت میں بامعنی مذاکرات ضروری ہیں،دونوں ملکوں کو  مشترکہ خطرات کا مل کرمقابلہ کرناضروری ہے۔

جان کربی کہتے ہیں کہ امریکا کی خواہش ہےکہ پاکستان اوربھارت میں حالیہ کشیدگی کم ہو۔

 ترجمان نے مزید کہا کہ امریکاپہلےبھی کہتا رہاہے کہ دہشت گردوں کےمحفوظ ٹھکانے نہیں ہونے چاہییں تاہم دہشت گردوں کےمحفوظ ٹھکانوں کیخلاف امریکاتعاون جاری رکھےگا۔

انھوں نے کہا کہ دہشت گردی کےخاتمےکیلئےپاکستان افغانستان اوردیگرحکومتوں سےمل کرکام کرتےرہیں گے۔

 کربی نے واضح کیا کہ خطےمیں دہشت گردی تمام ممالک کیلئےمشترکہ خطرہ ہے۔

 ایک سوال پرجان کربی نے کہا کہ امریکی کانگریس میں پاکستان کیخلاف بل کاعلم نہیں،وہ ایسا نہیں چاہیں گے۔

 ترجمان کا کہنا تھا کہ امیدہےکہ پاکستان نےایٹمی اثاثوں کی حفاظت کیلئےموثرانتظام کررکھاہے، انھوں زور دے کر کہا کہ پاکستان اوربھارت کی حکومتوں کےدرمیان مختلف مسائل پراختلاف ہے۔

 انھوں نے کہا کہ بھارتی،پاکستانی اورافغان شہری اوربچےدہشت گردی کانشانہ بن چکے ہیں،ایسانہیں ہےکہ پاکستان اوربھارت کےسیاستدان مشکلات کوسنجیدگی سےنہیں لیتے جبکہ امریکاچاہتاہےکہ دونوں مل کرمسائل حل کریں۔

انھوں نے امید کا اظہار کیا کہ پاکستان اوربھارت کےسیاستدانوں سےتوقع ہےکہ مسائل کےحل کیلئےکوشش کریں گے۔