سرگودھا، 25 ڈسپنسریوں کی عمارتیں زمین بوس ہونے کا خدشہ

سرگودھا، 25 ڈسپنسریوں کی عمارتیں زمین بوس ہونے کا خدشہ

سرگودھا (تہلکہ ٹی وی مانیٹرنگ ڈیسک) پندرہ برس سے مرمت نہ ہونے پر 2 ڈسپنسریاں منہدم ہو چکیں، نئی بھرتیاں نہ ہو نے کے باعث ڈاکٹرز کی بھی شدید قلت، حکما کے ریٹائرڈ ہونے کے باعث 4 مراکز صحت بند، 5 ڈاکٹرز شفٹوں میں کام چلانے پر مجبور، تفصیلات سامنے آگئیں۔

ضلعی انتظامیہ کی عدم توجہی کی وجہ سے ضلع کونسل کی 25 رورل ڈسپنسریوں کی عمارتیں کھنڈرات میں تبدیل ہو چکی ہیں جو کسی وقت بھی زمین بوس ہو کر بڑے حادثے کا سبب بن سکتی ہیں جبکہ دو ڈسپنسریاں گر بھی چکی ہیں۔ذرائع کے مطابق ضلع کونسل کی ڈسپنسریوں کی عمارتیں انتہائی پرانی ہیں، 2001 میں نیا بلدیاتی نظام آنے پر ضلع کونسل اور میونسپل کارپوریشن کی زیر نگرانی چلنے والے ان مراکزصحت کو ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت مسلسل نظر انداز کر رہی ہے۔

رہی سہی کسر تقریباً 25 سال سے ڈاکٹروں اور سٹاف کی بھرتی نہ ہونے نے پوری کر دی ہے ۔ ضلع کونسل کے متعدد ڈاکٹر اور سٹاف اپنی مدت ملازمت پوری ہونے پر ریٹائر ہوچکے ہیں اور اس وقت ڈسپنسریوں میں خدمات انجام دینے کیلئے صرف 5 ڈاکٹر ز موجود ہیں جو ان خستہ حال ڈسپنسریوں میں شفٹ وار ڈیوٹی دینے میں مصروف ہیں اسی طرح ضلع کونسل کی چار یونانی ڈسپنسریاں حکما کے ریٹائرڈ ہونے کے بعد نئی بھرتی نہ ہونے کی وجہ سے بند پڑی ہیں، انتظامیہ اور محکمہ صحت نے ان مراکز صحت پر توجہ نہ دی اور نئی بھرتی نہ ہوئی تو آئندہ چند سالوں میں یہ قصہ پارینہ بن کر رہ جائیں گی۔