دنیا کے امیر ترین شخص کو مچھر سے خوف آتا ہے

دنیا کے امیر ترین شخص کو مچھر سے خوف آتا ہے

نیو یارک: مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس کو شارک مچھلی کے تیز دانتوں سے بلکل ڈر نہیں لگتا بلکہ اُن کو مچھر کے منہ موجود سوئی سے ڈر لگتا ہے۔

بل گیٹس نے اپنی بلاگ پوسٹ میں بتایا کہ اُنکوشارک مچھلی سے ڈر نہیں لگتا لیکن مچھر سے لگتا ہے یعنی مچھر دنیا کے امیر ترین شخص کو خوف میں مبتلا کر دیتا ہے۔
بل گیٹس نے کہا اگر موازنہ کیا جائے تو ایک شارک بہت سی چھوٹی چیزوں کے مقابلے میں بالکل بھی دہشت زدہ کردینے والی نہیں لگتی۔

انہوں نے اپنی پوسٹ میں سال 2015 میں مختلف جانوروں کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد کا ایک گراف بھی شیئر کیا جس سے پتا چلتا ہے کہ شارک دنیا بھر میں صرف چھ ہلاکتوں کا باعث بنی جبکہ مچھروں نے 8 لاکھ 30 ہزار جانیں لیں۔

بل گیٹس کا کہنا ہے کہ مچھر ایک ہائپو ڈرمک سوئی کی مانند ہیں جو جسم کو بیماریوں سے بچانے والے دفاعی میکنزم کو بائی پاس کرکے امراض کو براہ راست خون میں پہنچا دیتے ہیں، جس کے نتیجے میں انسانوں پرحملے کرنے والے وائرس بہت تیزی سے پھیلتے ہیں۔

بل گیٹس نے مچھروں سے پھیلنے والی متعدد بیماریوں کی فہرست بھی دی جن میں ڈینگی، زیکا،زرد بخار اور سب سے خطرناک ملیریا شامل ہے، جس کے بارے میں ان کا کہنا تھا ‘یہ انسانی تاریخ کی سب سے اہم بیماری ہے۔
خیال رہے کہ ملیریا کا خاتمہ طویل عرصے سے بل اینڈ ملینڈا گیٹس فانڈیشن کی ترجیحات میں شامل ہے ۔