19 افسران نے ایف بی آرکے خزانےکتنے ارب روپے کا ٹیکہ لگایا؟

19 افسران نے ایف بی آرکے خزانےکتنے ارب روپے کا ٹیکہ لگایا؟

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) ایف بی آر نے قومی خزانے کو 2 ارب 11 کروڑ روپے کا ٹیکہ لگا دیا گیا۔ 1 ہزار 9 سو 96 مقدمات میں ضبط کی گئی اشیاء قومی خزانے میں جمع نہیں کرائی گئیں۔

آڈیٹر جنرل آف پاکستان نے مالی سال 16-2015 کی آڈٹ رپورٹ جاری کر دی ہے۔ رپورٹ کے مطابق ایف بی آر کے 19 افسران نے قومی خزا نے کو 2 ارب 11 کروڑ سے زائد کا ٹیکہ لگایا ہے۔ افسران نے 1 ہزار 9 سو 96 مقدمات میں ضبط کی گئی اشیاء قومی خزانے میں جمع نہیں کرائیں، قواعد کے مطابق ضبط کی گئی اشیاء فوری طورپر جمع کرانی ہوتی ہیں۔

رپورٹ کے مطابق نومبر 2015 میں ایف بی آر کو بے قاعدگیوں سے آگاہ بھی کردیا گیا تھا۔ بے قاعدگیوں سے متعلق ایف بی آر نے اپنے موقف میں کہا ہے کہ چند کیسز میں ریکوری کی جا رہی ہے اور دیگر معاملات عدا لت میں ہیں۔ رپورٹ کے مطابق بے قاعدگیاں ایف بی آر کے سینئر حکام کی کمزور نگرانی کے نتیجے میں ہوئیں۔ آڈیٹر جنرل نے اپنی رپورٹ میں ضبط کی گئی اشیاء فوری طور پر جمع کرانے اور خردبرد کے ذمہ داران کا تعین کرنے کی سفارش بھی کی ہے۔