تیزترین 100 وکٹوں کا سنگ میل عبور کرنا قابل فخر لمحہ ہے،مگرتوجہ جیت پر مرکوز ہے : یاسرشاہ

تیزترین 100 وکٹوں کا سنگ میل عبور کرنا قابل فخر لمحہ ہے،مگرتوجہ جیت پر مرکوز ہے : یاسرشاہ

دبئی:(تہلکہ ٹی وی) ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں تیز ترین 100 وکٹیں حاصل کرنے والے ایشین کرکٹر کا اعزاز حاصل کرنے والے قومی لیگ اسپنر یاسر شاہ کا کہنا ہے کہ وہ یہ سنگ میل عبور کرکے بہت زیادہ خوشی محسوس کررہے ہیں

۔پاکستان اور بھارت کے درمیان ہونے والے کرکٹ میچز ہمیشہ ہی دونوں ٹیموں کے کھلاڑیوں کے لیے اہمیت کے حامل ہوتے ہیں اور جب بھی مجھے بھارت کے خلاف کھیلنے کا موقع ملا تو بہترین کارکردگی دکھانے کی کوشش کروں گا۔میچ کے چوتھے دن کا کھیل مکمل ہونے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے یاسر شاہ نے کہا کہ  یہ ان کے لیے قابل فخر لمحہ ہے اور اب ان کی توجہ پاکستان کی جیت پر مرکوز ہے

۔یاسر شاہ نے اس بات کا اعتراف کیا کہ میچ سے قبل نہیں اندازہ نہیں تھا کہ وہ اس ریکارڈ کے قریب ہیں اور انہیں میڈیا پر چلنے والی خبروں سے معلوم ہوا کہ وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے ہیں۔یاسر شاہ نے تیز ترین 100 وکٹیں مکمل کرکے بھارت کے اسپنر روی چندرن ایشون کا ریکارڈ توڑا، پاکستانی لیگ اسپنر نے ریکارڈ اپنے نام کرنے کے بعد بھارتی اسپنر کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے میچ سے قبل اپنے ٹوئٹ میں یاسر شاہ کے لیے نیک تمنائوں کا اظہار کیا تھا۔یاسر شاہ نے کہا کہ جب کوئی آپ کی تعریف کرتا ہے تو اس سے بہت زیادہ حوصلہ ملتا ہے اور مجھے روی چندرن ایشون کا پیغام سن کر بہت خوشی ہوئی تھی۔

لیگ اسپنر نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان ہونے والے کرکٹ میچز ہمیشہ ہی دونوں ٹیموں کے کھلاڑیوں کے لیے اہمیت کے حامل ہوتے ہیں اور جب بھی مجھے بھارت کے خلاف کھیلنے کا موقع ملا تو بہترین کارکردگی دکھانے کی کوشش کروں گا۔واضح رہے کہ پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان دبئی میں ہونے والا ٹیسٹ میچ کئی اعتبار سے تاریخی اہمیت کا حامل ہے۔یہ ٹیسٹ میچ ڈے نائٹ ہے جبکہ اس میں گلابی گیند استعمال کی جارہی ہے

۔پہلی اننگز میں پاکستانی بیٹسمین اظہر علی نے ٹرپل سنچری اسکور کرکے اس میچ کو یاد گار بنایا تھا اور اب یاسر شاہ نے تیز ترین 100 وکٹیں مکمل کرکے نئی تاریخ رقم کردی۔اس کے علاوہ میچ میں پاکستان کی پوزیشن بھی مستحکم ہے اور اس کے پاس یہ میچ جیت کر سیریز میں برتری حاصل کرنے کا موقع موجود ہے۔یاد رہے کہ یاسر شاہ نے ٹیسٹ کرکٹ میں 100 وکٹیں حاصل کرنے والے مشترکہ طور پر دنیا کے دوسرے کھلاڑی ہونے کا بھی اعزاز حاصل کیا اور انہوں نے یہ کارنامہ ویسٹ انڈیز اور پاکستان کے درمیان دبئی میں ہونے والے پہلے ڈے نائٹ ٹیسٹ میچ کے دوران حاصل کیا۔