دہشتگردی سے بچاؤ : ٹرینوں میں جیمر لگانے کا فیصلہ

دہشتگردی سے بچاؤ : ٹرینوں میں جیمر لگانے کا فیصلہ

لاہور(حافظ فیض احمد) ریلوے کے شعبہ ٹیلی کمیونیکیشن نے حساس علاقوں میں ٹرینوں کو تخریب کاری اور دہشتگردی سے بچانے کیلئے ٹرینوں کے اندر جیمر لگانے کے لئے ہوم ورک شروع کر دیا ہے۔

اس حوالے سے جیمر خریدنے کیلئے کمیٹی بنانے پر بھی غور کیا جا رہا ہے ۔ذرائع کے مطابق 2سال قبل کوئٹہ سیکشن پر ٹرینوں کو تخریب کاری کا نشانہ بنایا گیا تھا جس پر ٹرینوں میں جیمر لگانے کی تجویز دی گئی اور اجلاس بھی ہوئے تاہم ٹرینوں میں جیمر نہ لگائے جا سکے ۔چند روز قبل مچھ کے مقام پر جعفر ایکسپریس کو ریموٹ کنٹرول بم سے تخریب کاری کا نشانہ بنایا گیا جس میں 8افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوئے جس کے بعد فیصلہ کیا گیا کہ حساس علاقوں میں چلنے والی ٹرینوں کو دہشتگردی سے بچانے کیلئے ان میں جیمر لگائے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق کوئٹہ ڈویژن کے مچھ،جیکب آباد ، سریاب سمیت بعض ریلوے سیکشنوں میں ٹرینوں کو دہشتگردی کانشانہ بنانے کے واقعات میں اضافہ ہواہے۔ کوئٹہ اور سکھر کے بعض سیکشنوں پر ریموٹ کنٹرول بموں کے ذریعے ریلوے ٹریک کو اڑایا گیا جس پر ریلوے حکام نے ٹرینوں کو بحفاظت منزل پر پہنچانے کے لئے کوئٹہ ڈویژن میں چلنے والی ٹرینوں میں جیمر لگانے کے لئے کام شروع کر دیا ہے ۔ذرائع کے مطابق ریلوے پولیس کی جانب سے بھی جیمرز لگانے کے حوالے سے ایڈیشنل جنرل منیجر ریلوے انفراسٹرکچرکو چٹھی ارسال کی گئی ہے تا کہ جلد از جلد کام شروع کیا جا سکے ۔ ریلوے کے بعض ماہرین کا کہناہے کہ جیمر لگنے سے ٹرینوں کو ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے حملوں سے بچایا جا سکتا ہے ۔ذرائع کے مطابق ٹرینوں میں جیمر لگا کر پہلے ان کا ٹرائل کیا جائے گا ۔