2نومبر کو اگرحکومت نےکارکنان کو گرفتار کیا تواس کیلئے پلان “بی”جاری : تحریک انصاف

2نومبر کو اگرحکومت نےکارکنان کو گرفتار کیا تواس کیلئے پلان “بی”جاری : تحریک انصاف

روالپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) 2 نومبر کو اسلام آباد کو بند کرنے کے  دوران اگرکارکنوں کو گرفتارکیا تو اس صورت میں پاکستان تحریک انصاف نے ’پلان بی‘ جاری کردیا۔

بنی گالہ میں عمران خان کی رہائش پر ہونے والے اجلاس میں کارکنوں کو ہدایات دی گئیں کہ اگر احتجاج کے دوران پنجاب حکومت رہنماؤں کو گرفتار کرے تو 200 سے زائد کارکن فوری طور پر متعلقہ پولیس اسٹیشن پہنچیں، اس کا گھیراؤ کریں اور وہاں دھرنا دے دیں۔ انہوں نے بتایا کہ پی ٹی آئی پلان کے مطابق 2 نومبر کو کارکنان فیض آباد پر اکھٹے ہوں گے اور عمران خان کی قیادت میں زیرو پوائنٹ کی جانب مارچ کریں گے اور زیرو پوائنٹ بلاک ہونے سے کشمیر ہائی وے، آئی جے پرنسپل روڈ، مری روڈ اور اسلام آباد ایکسپریس وے بند ہوجائے گی۔

اور یوں دارالحکومت بند ہوجائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ پارٹی لیڈرز کا یہ خیال ہے کہ حکومت از خود ہی سڑکوں کو بند کردے گی اور یہ اسلام آباد کو بند کرنے میں پی ٹی آئی کی معاونت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی پنجاب اور اسلام آباد پولیس کی جانب سے کسی بھی قسم کی جارحیت کو برداشت نہیں کرے گی کیوں کہ انہیں یہ اطلاعات ملی ہیں کہ پولیس پارٹی رہنماؤں کے خلاف ایکشن لے گی اور انہیں نظر بند بھی کیا جاسکتا ہے۔اجلاس میں دھرنے کو کامیاب بنانے کے لیے میڈیا اور سوشل میڈیا سے استفادہ کرنے کے طریقوں پر بھی غور کیا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ پارٹی ورکرز سے کہا گیا ہے کہ وہ اسلام آباد میں قیام کی تیاریاں کرکے آئیں۔