نواز اسامہ ملاقات، نوازشریف نے جہاد کے نام پر 150 ارب لے کر کہاں خرچ کیے، تہلکہ خیزانکشافات

نواز اسامہ ملاقات، نوازشریف نے جہاد کے نام پر 150 ارب لے کر کہاں خرچ کیے، تہلکہ خیزانکشافات

لاہور (تہلکہ ٹی وی مانیٹرنگ ڈیسک) اسامہ بن لادن نوازشریف سے کیوں ملنا چاہ رہے تھے؟ مدینہ منورہ میں بن لادن اور نوازشریف کی ملاقات کہاں ہوئی؟ نوازشریف نے اسامہ بن لادن کو کہا مجھے جہاد سے پیار ہے؟ میاں نوازشریف نے جہاد کے نام پر اسامہ بن لادن سے کتنے ارب لیے؟ اسامہ بن لادن کے پاؤں کو کیوں پکڑا؟ نواز شریف نے جہاد کے نام پر پیسے لے کر کہاں خرچ کردیئے؟ نوازشریف وعدے کے پابند نہیں، جھوٹ بولتے ہیں، میاں نوازشریف اور اسامہ بن لادن کی ملاقات کا احوال، سینئر صحافی، چیف ایڈیٹر فرنٹیر پوسٹ رحمت شاہ آفریدی کا نجی ٹی وی میں انٹرویو، تہلکہ خیز انکشافات نے نئی بحث چھیڑ دی۔

سٹار ایشیا کے پروگرام فیس ٹو فیس میں اینکر کاشف بشیر خان سے گفتگو کرتے ہوئے چیف ایڈیٹر فرنٹیر پوسٹ رحمت شاہ آفریدی نے کہا کہ اُسامہ بن لادن سے میری دوستی بھی تھی افغان وار کی وجہ سے میری اُن سے ملاقات بھی ہوئی تھی ،جب بھی میں عمرہ کرنے جاتا تھا تب ملاقات ہوتی تھی ۔میں اُن کی ہاں کبھی ٹھہرا نہیں ۔ اسامہ بن لادن نے ایک دفعہ مدینہ منورہ میں ملاقات ہوئی ، انہوں نے مجھ سے پوچھا کہ نوازشریف کے آپ سے کیا اختلاف ہیں، میں نے کہا کہ نوازشریف جھوٹ بولتا ہے ۔اپنے وعدے کا پابند آدمی نہیں ہے اور ان کے عزائم بہت آگے تک ہیں، میں اس لیے اُن کے مخالف ہوں اور ایسا کوئی معاملہ نہیں ہے۔

اس پر اسامہ بن لادن نے کہا کہ نواز شریف مجھ سے ملنا چاہتے ہیں میرے پیچھے اپنے دوست لگائے ہیں تو آپ میرے ساتھ چلیں،اب گرین پیلس ہوٹل میں ملاقات طے پائی ہے۔ جس پر میں نے جواب دیا کہ میں نہیں جاؤں گا۔ آپ نے کسی بات پر میاں صاحب سے نہ کردی تو سارا ملبہ مجھ پر آجائے گا۔ اس پر اسامہ بن لادن نے کہا کہ آپ بس ساتھ چلیں، وہاں کیفیٹیریا میں کسی اور جگہ بیٹھ جائیے گا۔ جس پر میں نے رضامندی ظاہر کی۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ اسامہ بن لادن اور میاں نوازشریف کی اس ملاقات میں خواجہ خالد بھی ہمراہ تھے ، وہاں پہ میاں صاحب کے ایکشن جوتھے مجھے ابھی تک یاد ہے کہ ان کے ایکشن ایسے تھے کہ وہ اسامہ بن لادن کیلئے کچھ بھی کرنے کو تیار تھے اور یہاں تک کہ ا نہوں نے اسامہ بن لادن کے پاؤں کو ہاتھ لگایا۔پھر مجھے یہ آواز آئی تھی کہ ’’آئی لو آل سو جہاد‘‘ یہ نواز شریف نے کہا تھا کیوں کہ اُن کی انگریزی بھی میری طرح ہے، اس حرکت سے اسامہ ناراض تھے ، اُنھوں نے اسامہ بن لادن کے پاؤں پکڑ کر یہ کہا کہ آپ میرے مائی باپ ہو۔

انہوں نے مزید تہلکہ خیز انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ رات کو ہماری ملاقات دوبارہ ہوئی تو اُسامہ نے بتایا کہ کشمیر اور افغان جہاد کیلئے اُن کے بہت بڑے عزائم ہیں اور اس کیلئے اپنا بہت کچھ خرچ کرنے کو بھی تیار ہیں تو میں نے اُن کو ہاں کر دی ہے۔ نوازشریف نے جہاد کے نام پر اسامہ بن لادن سے 150ارب روپے لیے ۔ اس میں28کروڑ بینظیر بھٹو کے خلاف ووٹ آف نو کانفیڈینس کیلئے پیش کیا تھا ، اور 1کروڑ 24لاکھ جو جو ان کے ساتھ تھا وہاں ہی کھا گیا تھاپھر1کروڑ ان کا ایک اور ساتھی کھا گیا تھا باقی پیسوں کا مجھے نہیں پتہ کیا گیا تھا۔