متنازعہ خبر کے ذریعے سول ملٹری قیادت میں تقسیم کی کوشش کی گئی، وفاقی وزیرداخلہ

متنازعہ خبر کے ذریعے سول ملٹری قیادت میں تقسیم کی کوشش کی گئی، وفاقی وزیرداخلہ

اسلام آباد (نمائندہ تہلکہ ٹی وی) کس نے ڈان نیوز کی خبر لیک کی ؟ اس وقت تک اُس تک نہیں پہنچے ، جھوٹی خبر کے ذریعے سول ملٹری قیادت میں تقسیم کی کوشش کی گئی ، جب دنیا بھر میں یہ خبر کوٹ کرکے ہمارا مذاق اڑایا جارہا ہے، اسلام آباد میں چوہدری نثار علی خان کی پریس کانفرنس ، اہم حقائق سامنے لے آئے۔

چوہدری نثار علی خان نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم کسی حکمران کے سامنے جوابدہ نہیں، اللہ کے سامنے جواب دہ ہوں۔ ڈان نیوز کی انکوائری کے حوالے سے آرمی چیف کی درخواست پر اعلان سے پہلے ان کے سامنے انکوائری رپورٹ رکھی گئی ۔ وزیراعظم پاکستان کیساتھ ملاقات کے بعد میں نے آرمی چیف کیساتھ ملاقات میں ڈان کی تمام سٹوری کی تحقیقات کو شیئر کیا۔ آرمی چیف کیساتھ ملاقات ہمیشہ کی طرح بہت اچھی رہی ۔ آرمی چیف کیساتھ زیادہ وقت اسلئے لگا کہ وہاں طے یہ ہونا تھا کہ پریس ریلیز کی حدود کیا ہوں گی۔

چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ پرویز رشید کے حوالے سے کچھ ڈاکو منٹ کیساتھ انہیں کہا گیا کہ متعلقہ صحافی کیساتھ وزیراعظم ہاؤس کے حوالے سے ایک سٹوری ہے جس سے متعلق وہ پرویز رشید سے ریمارکس لینا چاہتا ہے جس کے بعد پرویز رشید کی متعلقہ صحافی سے ملاقات ہوئی۔ پرویز رشید صاحب کو اس صحافی کو کہنا چاہیے تھا کہ یہ خبر غلط ہے مت چھاپیں، اگر وہ ان کی بات نہیں مانتا تو ان کو ڈان کی انتظامیہ سے بات کرنی چاہیے تھی ۔ یہ کوتاہی پرویز رشید صاحب کی جانب سے برتی گئی، جس کی وجہ سے انہیں عہدے سے علیحدہ کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ اس نیوز کے دو پہلو ہیں ، جس کا پہلا پہلو یہ ہے کہ نان سٹیٹ ایکٹر کے حوالے سے سول اور ملٹری قیادت میں تلخی ہوئی ، جو سراسر جھوٹ ہے۔ تین تاریخ کو نیشنل سیکیورٹی کی کوئی میٹنگ ہوئی ہی نہیں بلکہ 4تاریخ کو اجلاس ہوئے ہیں۔ دوسرے پہلو میں سیکرٹری خارجہ کے حوالے سے پاکستان کی تنہائی کے بارے میں جو بات کہی گئی وہ سراسر غلط ہے۔ اس خبر کے ذریعے ملک کے اندر سول ملٹری تقسیم کی کوشش کی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ جس نے بھی یہ جھوٹی خبر قوم کو دی ہے اس کی پیچھے کون ہے، اس کیلئے سول ملٹری قیادت اور میڈیا کو ایک ہونا چاہیے۔